ٹیسلا کی سب سے سستی گاڑی 82 لاکھ 22 ہزار روپے کی

ٹیسلا نے اپنی تمام کاروں کی قیمتیں بڑھا دی ہیں جس کے بعد کمپنی کی سستی ترین گاڑی کی قیمت 2 ہزار ڈالرز کے اضافے کے ساتھ 47 ہزار ڈالرز ( یعنی تقریباً 82 لاکھ 22 ہزار روپے) کی ہو گئی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے میل آن لائن کے مطابق  ٹیسلا نے اپنی تمام کاروں کی قیمتیں بڑھا دی ہیں جس کے بعد کمپنی کی سستی ترین گاڑی کی قیمت 2 ہزار ڈالرز کے اضافے کے ساتھ 47 ہزار ڈالرز ( یعنی تقریباً 82 لاکھ 22 ہزار روپے) کی ہو گئی ہے۔ کمپنی کی جانب سے کاروں کی قیمتیں امریکہ اور چین دونوں ممالک میں بڑھائی گئی ہیں جس سے کئی دیگر ممالک کے صارفین بھی متاثر ہوں گے۔

ایلون مسک کا کہنا ہے کہ روس کے یوکرین پر حملے کے بعد سپلائی چین میں رکاوٹ آنے کی وجہ سے خام میٹریل مہنگا ہو گیا ہے جس کی وجہ سے گاڑیوں کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا ہے۔ دیگر خام مٹیریل کی طرح ایلومینیم کی قیمت میں بھی اضافہ ہوا ہے جو کاروں کے باڈی ورک میں استعمال ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ کیٹالیٹک کنورٹرز میں استعمال ہونے والا پیلاڈیم سمیت بیٹریوں میں استعمال ہونے والے نکل اور لیتھیم بھی مہنگے ہوگئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

ایلون مسک کی کمپنی ٹیسلا پر خواتین کو جنسی ہراساں کرنے کا الزام

غیر ملکی خبر رساں ادارے سی این بی سی کے مطابق ٹیسلا کروڑوں یوروز مالیت کا ایلومینیم روسی کمپنی ’ رسل ‘ سے خرید چکی ہے جسے جرمنی کے دارالحکومت برلن کے قریب کمپنی کے نئے پلانٹ میں استعمال کیا جارہا ہے۔ جنگ کے دوران رسل کمپنی کے ارب پتی بانی اولیگ ڈیریپیسکا پر برطانیہ کی جانب سے پابندیاں عائد کی جا چکی ہیں۔

اس سے قبل ایلون مسک کی جانب سے یہ بھی کہا گیا تھا کہ ان کی کمپنی ٹیسلا افراط زر کے دباﺅ کا شکار ہے۔ ٹیسلا کی سب سے مہنگی کار ’ ماڈل ایکس پلیڈ ‘ ہے جس کی قیمت میں ساڑھے 12 ہزار ڈالرز کا اضافہ ہوا ہے جس کے بعد اب اس ماڈل کی قیمت 1 لاکھ 38 ہزار 990 ڈالرز ( یعنی تقریباً ڈھائی کروڑ روپے ) سے شروع ہوگی۔