شاہین آفریدی مکمل فٹ نہیں تھے پھر بھی ورلڈکپ کھلایا گیا ، نیا انکشاف

شاہین آفریدی کی انجری سے متعلق انکشاف سامنے آیا ہے کہ وہ مکمل فٹ نہیں تھے اس کے باوجود بھی انہیں ورلڈکپ کھلایا گیا۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق شاہین آفریدی کے قریبی ذرائع کا دعویٰ ہے کہ وہ مکمل فٹ نہیں تھے اس کے باوجود انہیں ورلڈکپ کھلایا گیا۔ ابتداء کے میچز میں وہ "اسٹرگل ” کرتے رہے اور فائنل میں وہ دوبارہ اسی گھٹنے کی انجری کا شکار ہوگئے۔

جیو نیوز کے مطابق پی سی بی کا میڈیکل یونٹ حقیقت نہیں بتا رہا۔ شاہین کی انجری سنجیدہ نوعیت کی ہے اور انہیں ” ٹئیر ٹو ” ہے۔ اُن کی صورتحال ایسی نہیں ہے جیسی بورڈ بتا رہا ہے۔ بورڈ کو رپورٹ سامنے لانی چاہیے۔

یہ بھی پڑھیے

ویرات کوہلی کے کمرے کی ویڈیو لیک ، انوشکا شرما بھڑک اٹھیں

ادھر پاکستان کرکٹ بورڈ کے مطابق پیر کو میلبرن میں شاہین آفریدی کا ایم آر آئی اسکین ہوا۔ پی سی بی کے چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر نجیب اللہ سومرو اور آسٹریلوی ڈاکٹر پیٹر نے اپنی رپورٹ میں تصدیق کی کہ شاہین آفریدی کی انجری کی نوعیت سنجیدہ نہیں اور اب وہ بہت بہتر محسوس کررہے ہیں۔ ڈاکٹرز نے شاہین کو دو ہفتے آرام کا مشورہ دیا ہے۔

پی سی بی کے مطابق شاہین آفریدی کے اسکین میں بڑی انجری کی نشاندہی نہیں ہوئی۔ وہ دو ہفتے بعد ایکشن میں ہوں گے اور انگلینڈ کے خلاف پہلا ٹیسٹ نہیں کھیلیں گے ۔ شاہین آفریدی کی دیگر میچز میں شرکت بھی فٹنس سے مشروط ہوگی۔