پاک بھارت میچ میں کن بھارتی کھلاڑیوں پر بھروسہ کیا جاسکتا ہے؟

پاک بھارت ہائی وولٹیج میچ میں کن بھارتی کھلاڑیوں پر بھروسہ کیا جاسکتا ہے؟ کون سے انڈین کھلاڑی ایسے ہیں جو نگاہوں کامرکز ہوں گے؟ اور کون سا کرکٹر بازی پلٹنے کی صلاحیت رکھتا ہے؟

ٹی ٹوئنٹی عالمی جنگ میں پاک بھارت ہائی وولٹیج میچ میں بھارتی سورماؤں کی ٹیم میں تجربہ کار اور ان فارم کھلاڑیوں کی بھرمار ہے۔ پاکستان اور بھارت کے درمیان ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے میچ میں سورماؤں کے پانچ نام ایسے ہیں جومرکزِ نگاہ ہیں۔

ویرات کوہلی

ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل ورلڈ کپ میں سب سے زیادہ 3 ہزار 159 رنز بنانے والے ویرات کوہلی ورلڈ کپ کے بعد ٹی ٹوئنٹی کی قیادت سے دستبردار ہوجائیں گے۔ گرین شرٹس کے خلاف کھیلے گئے 6 میچز میں ویرات کوہلی 84 کی بھاری بھرکم اوسط اور 118 کے اسٹرائک ریٹ سے 254 رنز بنا چکے ہیں۔

کے ایل راہول

کے ایل راہول کا شمار تجربہ کار اوپنرز میں ہوتا ہے جو اس وقت ٹی ٹوئنٹی رینکنگ میں چھٹے نمبر پر فائز ہیں۔ وہ انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) میں 626 رنز بنا کر سب سے زیادہ اسکور کرنے والے کھلاڑیوں میں تیسرے نمبر پر رہے۔ دائیں ہاتھ کے بیٹسمین انگلینڈ کے خلاف وارم اپ میچ میں 51 اور آسٹریلیا کے خلاف 39 رنز بنا کر حریف ٹیموں کیلئے خطرے کی گھنٹی بجا چکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

شاہد آفریدی ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ اسکواڈ میں شعیب ملک کی واپسی پر خوش

روہت شرما

محدود اوورز کی کرکٹ میں روہت شرما دنیا کا بڑانام ہے۔ ٹی ٹوئنٹی میں سب سے زیادہ 4 سنچریز بنانے والے اوپنر تمام ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ کھیلنے والے واحد بھارتی بھی ہیں۔ وہ اپنی ٹیم کی جانب سے سب سے زیادہ 111 ٹی ٹوئنٹی میچز کھیلنے کا اعزاز بھی رکھتے ہیں۔ پاکستان کے خلاف ٹی ٹوئنٹی مقابلوں میں اگرچہ ان کا ٹریک ریکارڈ خراب ہے لیکن گرین شرٹس کے خلاف ون ڈے کرکٹ میں وہ عمدہ ریکارڈ رکھتے ہیں۔

ریشبھ پانت

یہ پہلا موقع ہے جب بھارتی ٹیم ایم ایس دھونی کے بغیر ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ میں حصہ لے رہی ہے اور اس مرتبہ یہ اہم ذمہ داری ریشبھ پانت ادا کر رہے ہیں۔ 24 سالہ وکٹ کیپر بیٹسمین انڈیا کو کئی فتوحات سے ہمکنار کراچکے ہیں وہ پاکستان کے خلاف پہلی بار ایکشن میں دکھائی دیں گے۔

جسپریت بمراہ

جسپریت بمراہ اس وقت بھارت کے نمبر ون فاسٹ بالر ہیں۔ آئی پی ایل میں 21 وکٹیں لے کر انہوں نے ان فارم ہونے کاثبوت بھی دے دیا۔ کورونا وائرس کے بعد سے اگرچہ 27 سالہ بالر نے ٹی ٹوئنٹی کے انٹرنیشنل مقابلوں میں شرکت نہیں کی ہے تاہم اس فارمیٹ میں دائیں ہاتھ کے فاسٹ بالر محض 6 اعشاریہ 67 کی کفایتی بالنگ سے 50 میچز میں 59 وکٹیں حاصل کر کے دوسرے کامیاب انڈین وکٹ ٹیکر ہیں۔