انتہائی مذہبی گھرانے کی لڑکی نے فحش فلم انڈسٹری میں قدم رکھ دیا

امریکی ریاست ٹیکساس کے ایک انتہائی مذہبی گھرانے سے تعلق رکھنے والی 19 سالہ لڑکی نے اہلخانہ سے چوری چھپے فحش فلم انڈسٹری میں قدم رکھ دیا۔ وہ فحش ویب سائٹ پر اپنی نازیبا ویڈیوز اور تصاویر فروخت کرتی ہے جن کے ذریعے ماہانہ لاکھوں روپے کما رہی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے ڈیلی مرر کو دیئے گئے انٹرویو میں ٹیکساس کے انتہائی مذہبی گھرانے سے تعلق رکھنے والی ایڈیسن سنز نامی لڑکی نے بتایا کہ انہوں نے اہلخانہ سے چوری چھپے فحش فلم انڈسٹری میں قدم رکھ دیا ہے۔ ان کا گھرانہ انتہائی مذہبی ہے جو ہر اتوار کو گرجا گھر جاتا ہے اور ہر شام ڈنر پر سب گھر والے اکٹھے ہوتے ہیں۔ وہ گھر سے باہر اپنے دوستوں کے ساتھ شراب نوشی کرنے گئی تو اسے فحش فلم انڈسٹری میں قدم رکھنے کا خیال آیا۔

ایڈیسن سنز کا کہنا ہے کہ اس نے بیشتر ویڈیوز بنوائیں اور ایک فحش میگزین کیلئے برہنہ فوٹو شوٹ کروایا۔ اس نے غلطی یہ کی کہ میگزین اپنے گھر کے پتے پر منگوا لیا اور یہ میگزین اس کی والدہ کے ہاتھ لگ گیا جس پر گھر میں ہنگامہ برپا ہوگیا۔

یہ بھی پڑھیے

فیس بک، انسٹاگرام اور واٹس ایپ بند ہونے میں خلائی مخلوق کا ہاتھ

ایڈیسن سنز نے بتایا کہ جب یہ حقیقت سامنے آئی کہ میں فحش فلم انڈسٹری میں کام کرتی ہوں تو میرے گھر والوں کو گرجا گھر سے نکال دیا گیا۔