او جی ڈی سی ایل نے پنجاب میں تیل و گیس کے ذخائر دریافت کر لیے

آئل اینڈ گیس ڈویلپمنٹ کمپنی لمیٹڈ (او جی ڈی سی ایل) نے پنجاب میں تیل و گیس کے ذخائر دریافت کر لیے۔

مقامی نیوز ویب سائٹ’پروپاکستانی‘ کے مطابق آئل اینڈ گیس ڈویلپمنٹ کمپنی لمیٹڈ (او جی ڈی سی ایل) نے پنجاب میں تیل و گیس کے ذخائر دریافت کر لیے ہیں۔ تیل و گیس کے یہ ذخائر او جی ڈی سی ایل کو اٹک کے قریب واقع توت ڈیپ 1۔ کنویں سے ملے ہیں۔

او جی ڈی سی ایل نے توت ڈیپ 1۔ کنویں کی کھدائی کا آغاز25دسمبر 2020ءکو کیا تھا۔ یہاں توبرا فارمیشن میں 5ہزار 545میٹر تک کامیابی کے ساتھ کھدائی کی گئی۔

یہ بھی پڑھیے

ڈالر کے حوالے سے ذمہ داری اسٹیٹ بینک کی ہے ، اسحاق ڈار

اوپن ہول لاگ کے اعدادوشمار کی بنیاد پر لاک ہارٹ فارمیشن کے مطابق یہاں سے 64/32چوک سائز، 600 پاؤنڈ فی مربع انچ(پی ایس آئی) اور ویل ہیڈ فلوئنگ پریشر سے 882 بیرل خام تیل یومیہ اور 0.93ملین مکعب سٹینڈرڈ کیوبک فٹ گیس یومیہ حاصل ہوں گے۔

ان ذخائر میں موجود تیل کی اس قدر مقدار پوٹھوہار بیس کے علاقے میں مزید ذخائر کی نشاندہی بھی کرتی ہے۔ او جی ڈی سی ایل ایکسپلوریشن اور پروڈکشن کمپنیوں میں سرفہرست ہونے کی وجہ سے تیل و گیس کی تلاش کیلئے جارحانہ حکمت عملی اپنائے ہوئے ہے۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ اس دریافت سے ملک کے ہائیڈروکاربن کے ذخائر میں خاطرخواہ اضافہ ہو گا اور ملک کی توانائی کی طلب و رسد میں فرق کو کم کرنے میں مدد ملے گی۔