قرض پروگرام کی بحالی کیلئے آئی ایم ایف نے پاکستان کے سامنے نئی شرط رکھ دی

عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) نے قرض پروگرام کی بحالی کیلئے پاکستان کے سامنے نئی شرط رکھ دی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق آئی ایم ایف نے قرض پروگرام کی بحالی کیلئے پاکستان کے سامنے سخت شرط رکھی ہے جس کے تحت حکومت نے جن اشیاء پر ٹیکس چھوٹ دے رکھی ہے ، ان پر بھی 17 فیصد سیلز ٹیکس لگانا ہوگا۔ آئی ایم ایف کی نئی شرط کے تحت موبائل فونز پر بھی سیلز ٹیکس کی شرح 17 فیصد تک کیے جانےکا امکان ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق آئی ایم ایف کے مطالبے پر حکومت نے 330 ارب روپے کا سیلز ٹیکس استثنیٰ ختم کرنے کی تیاری کرلی ہے جبکہ سیلز ٹیکس پر یہ چھوٹ ختم کرنے کیلئے صدارتی آرڈیننس لایا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیے

سروس ڈاؤن، بانی فیس بک مارک زکر برگ کو ساڑھے 6 ارب ڈالرز کا نقصان

دوسر ی جانب واشنگٹن میں وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے امریکی تھنک ٹینک میں گفتگو کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ آئی ایم ایف کی طرف سے چھٹی قسط جلد مل جائے گی۔ اب تک آئی ایم ایف کے ساتھ تکنیکی میٹنگ مکمل ہوچکی ہیں۔